اشاعتیں

cronavirus لیبل والی پوسٹس دکھائی جا رہی ہیں

صاحب کے لیے کرونا ویکسین لاؤ... صاف چِپ.... مصالحہ مار کے....!

تصویر
کچھ لوگ انہیں سازشی نظریات تو کچھ پسِ پردہ چھپے حقائق مانتے ہیں میں تو  لاک ڈائون میں پھنسا ہوا ہوں، اس لیے میں نہ تو کچھ جانتا ہوں اور نہ کچھ مانتا ہوں تو جناب، پڑھنا ہے تو اپنے رسک پر پڑھیے، کمپنی کسی بھی بات کی ذمہ دار نہ ہوگی بات اسی منحوس کرونا کی ہے... جو نہ اگلے بنے، نہ نگلے بنے کرونا کے بارے میں یہ کہانی بار بار سننے کو ملتی رہی ہے  کہ امریکہ کی لیبارٹریوں میں ایک کلموہے وائرس کے ساتھ ایسی بائیو لوجیکل انجینئرنگ یعنی ایسا جگاڑ کیا گیا کہ اسے کسی مخصوص طریقہ کار کے ذریعے کنٹرول کیا جا سکے۔ یوں سمجھ لیں کہ یہ نظر نہ آنے والا چھوٹو بدمعاش تھا، جسے دشمن  دے پنڈ اچ  خوف اور بیماری پیدا کرنے کے لئے تیار کیا گیا۔ اس سے خوف پیدا کر کے کسی بھی علاقے کا نظام زندگی برباد کیا جا سکتا تھا۔ اور امریکہ کے لیے یہ دشمن پنڈ کوئی اور نہیں بلکہ ساڈا لنگوٹیا یار چین ہی تھا، جس کے پاس چار ہزار ارب ڈالر سے زیادہ کے زرمبادلہ ذخائر ہیں۔ چین نے یورپ اور افریقہ کے بعد امریکی منڈیوں میں بھی اپنی دھاک بٹھادی ہے. کہانی بیان کرنے والے بتاتے ہیں کہ معاملے نے ڈرامائی موڑ تب لیا جب فائیو ج

تنزانیہ کے صدر نے کروناوائرس ٹیسٹ کٹس کی جھوٹی رپورٹو‍ں کا پول کھول کر رکھ دیا

تصویر
تنزانیہ کے صدر نے کروناوائرس ٹیسٹ کٹس کی جھوٹی رپورٹو‍ں کا پول کھول کر رکھ دیا تنزانیہ کے صدر جان پومبے مغوفولی نے جانوروں کے ٹیسٹ  کی رپورٹ بھی کورونا وائرس پازیٹو آنے پر کٹس پر سوالات اٹھائے ہیں. تنزانیہ کے صدر جان مغوفولی، جو کیمسٹری میں تعلیم کی اعلی' ڈگری رکھتے ہیں، کا کہنا ہے کہ COVID-19 کے لئے ہم نے بکری ، بھیڑ اور پاوپا کے نمونے بھیجے تھے جن کی رپورٹ مثبت آئی ہے. انہوں  نے امپورٹڈ کورونا وائرس ٹیسٹنگ کٹس کو ناقص قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا ہے. انہوں نے کہا کہ ہم نے رینڈملی متعدد غیر انسانی نمونے حاصل کیے تھے ، جن میں پھل، پپیتا،  بکرا اور بھیڑ وغیرہ شامل تھے ، لیکن فرضی طور پر ہم نے ان سیمپلز پر انسانی نام اور عمریں  لکھ کر، یہ نمونے  لیبارٹری کو کورونا وائرس کی جانچ کے لئے بھیجے   تھے ،اور یہ بات ہم نے لیب کے تکنیکی ماہرین سے جان بوجھ کر خفیہ رکھی تھی. صدر نے کہا کہ حیران کن طور پر جو  رپورٹس آئی ہیں، اُن کے مطابق اِن غیر انسانی فرضی نمونوں میں کوویڈ 19 وائرس پایا گیا ہے، جس کا سیدھا مطلب یہ ہے کہ کرونا وا ئرس کی ٹیسٹ کٹس انتہائی ناقص ہیں. نتیجہ یہ

کرونا کی ویکسین ہمارے پاس پہلے سے ہی موجود ہے!

تصویر
کرونا کی ویکسین ہمارے پاس پہلے سے ہی موجود ہے! کرونا کرونا کے شور سے ویکسین ویکسین کی صدائیں بھی سننے میں آ رہی ہیں.... لیکن جب حواس منتشر ہوں تو ایسی حالت میں سامنے پڑی چیز بھی دکھائی نہیں دیتی.... ہر طرف ایک سوال ہے آخر یہ ویکسین کب تیار ہوگی!!؟؟ لیکن ایک منٹ رکیے..... کیا آپ کا دھیان اس طرف بلکل بھی نہیں گیا، جی ہاں، اس ویکسین کی طرف، جو نہ صرف کرونا بلکہ ہر بیماری کے خلاف ایک قدرتی ہتھیار کی طرح ہے....؟ اگر آپ کی توجہ اس طرف نہیں گئی، تو ہم آپ کو متوجہ کیے دیتے ہیں. ان دنوں آپ کو ایک اصطلاح کئی ذرائع سے مسلسل سننے کو مل رہی ہوگی: " مدافعتی نظام " Immunity / Immune System مختصر اور آسان الفاظ میں ہم کہہ سکتے ہیں کہ یہ بیماریوں کے خلاف لڑنے والا قدرتی نظام ہے، جو ہمارے جسم میں موجود ہے. ہمیں صحت مند رکھنا اور ہمارے جسم کو مختلف جراثیم کے حملوں سے بچانا ہمارے مدافعتی نظام کا بنیادی کام ہے۔ یہ نظام ہر وقت جراثیم اور مختلف قسم کے بیکٹریاز سے جنگ کی حالت میں رہتا ہے. یہاں تک کہ  ﺳﺎﺋﻨﺴﯽ میگزین "ﺍﻣﯿﻮﻧﭩﯽ ﺍﯾﻨﮉ ﺍﯾﺠﻨﮓ" ﻣﯿﮟ ﭼﮭﭙﻨﮯ ﻭﺍﻟﯽ ایک ﺗﺤﻘﯿ