اشاعتیں

allama mashriqi predictions لیبل والی پوسٹس دکھائی جا رہی ہیں

آپ یہ تقریر پڑھ کر حیران رہ جائیں گے کہ یہ پون صدی قبل کی تقریر ہے یا  آج کی تصویر!؟

تصویر
علامہ مشرقی کی ایک یادگار تقریر سے اقتباس علامہ عنایت اللہ خاں مشرقی  1888ء میں امرتسر میں پیدا ہوئے. ﻋﻼﻣﮧ ﻣﺸﺮﻗﯽ ایک ہمہ جہت شخصیت تھے، وہ ﺑﻠﻨﺪ ﭘﺎﯾﮧ ریاضیدان، ﺍﻧﺸﺎﭘﺮﺩﺍﺯ، ﻓﻠﺴﻔﯽ، شاعر، سیاستدان، ﻣﻮﺭﺥ، مفسر اور کئی کتابوں کے مصنف  ﺗﮭﮯ۔ وہ کرداری اور عملی سطح پر انقلابی تبدیلی کی خاکسار تحریک کے روحِ رواں بھی تھے، لیکن اس سب کے باوجود ہم نے انہیں اپنی من پسند تاریخ کے معروف حصے میں جگہ نہیں دی. علامہ مشرقی نے 18 ﺳﺎﻝ ﮐﯽ ﻋﻤﺮ ﻣﯿﮟ ﭘﻨﺠﺎﺏ ﯾﻮﻧﯿﻮﺭﺳﭩﯽ ﺳﮯ ﺍﯾﻢ ﺍﮮ ﺭﯾﺎﺿﯽ  پہلی ﭘﻮﺯﯾﺸﻦ ‏(1906) ﻣﯿﮟ اور اس کے بعد ﮐﯿﻤﺒﺮﺝ ﯾﻮﻧﯿﻮﺭﺳﭩﯽ ﺳﮯ ﺑﯿﮏ ﻭﻗﺖ ﭼﺎﺭ ﭨﺮﺍﺋﯽ ﭘﻮﺯ ﺁﻧﺮﺯ ﺭﯾﻨﮕﻠﺮ ﺳﮑﺎﻟﺮ، ﺑﯿﭽﻠﺮ ﺳﮑﺎﻟﺮ، ﻓﺎﺅﻧﮉﯾﺸﻦ ﺳﮑﺎﻟﺮ ﺍﻭﺭﻣﮑﯿﻨﯿﮑﻞ ﺍﻧﺠﯿﻨﺌﺮﻧﮓ ﻣﯿﮟ ﺍﻋﻠﯽٰ ﭘﻮﺯﯾﺸﻦ ﻣﻊ ﻭﻇﺎﺋﻒ ﺣﺎﺻﻞ ﮐﺮ نے کے بڑے کارنامے سرانجام دیے۔ انہوں ﻧﮯ 1945ﺀ ﻣﯿﮟ نہ صرف دلائل کے ذریعے ﻣﺮﻭﺟﮧ ﻣﻐﺮﺑﯽ ﺟﻤﮩﻮﺭﯾﺖ ﮐﻮ ﺯﺭ ﭘﺮﺳﺖ ﻣﺎﻓﯿﺎ ﮐﯽ ﺳﺎﺯﺵ ﺛﺎﺑﺖ کیا، بلکہ اس کے ساتھ اس ﺯﺭ ﭘﺮﺳﺖ ﻣﺎﻓﯿﺎ ﮐﺎ ﺩﻧﯿﺎ ﮐﮯ ﻭﺳﺎﺋﻞ ﭘﺮ ﺳﮯ ﻗﺒﻀﮧ ﺧﺘﻢ ﮐﺮﻭﺍﻧﮯ کے ﻓﻄﺮﺗﯽ ﺣﻞ پر مبنی ﺣﻘﯿﻘﯽ ﺍﺳﻼﻣﯽ ﻓﻄﺮﯼ ﺟﻤﮩﻮﺭﯾﺖ ﮐﺎ ﻓﺎﺭﻣﻮﻻ ”ﻃﺒﻘﺎﺗﯽ ﻃﺮﯾﻖِ ﺍﻧﺘﺨﺎﺏ“ ﮐﯽ ﺻﻮﺭﺕ ﻣﯿﮟ ﭘﯿﺶ بھی کیا. علامہ ﻣﺸﺮﻗﯽ نے 14 ﺟﻮﻻﺋﯽ 1947ء ک