جانسن اینڈ جانسن بے بی پاؤڈر پر کینسر کی وجہ بننے کا الزام


جانسن اینڈ جانسن نے امریکہ اور کینیڈا میں اپنے مشہور برانڈ  بیبی ٹیلکم  پاؤڈر  کی فروخت بند کر دی ہے۔ واضح رہے پاؤڈر میں  آلودہ مادے کے استعمال، جلد کی صحت کے لیے نقصان دہ ہونے اور کینسر کی وجہ بننے کے الزام پر مبنی قانونی چارہ جوئی کی درخواستوں کے بعد کمپنی کو پہلے ہی اپنی پراڈکٹ کی فروخت میں واضح کمی کا سامنا تھا. 

"صحت کی دیکھ بھال کرنے والی" اس بڑی کمپنی نے منگل کو کہا کہ اس نے "تجارتی فیصلہ" آنے کے بعد امریکہ اور کینیڈا میں سیکڑوں ٹالک پر مبنی اشیاء کی فراہمی بند کردی ہے۔ کمپنی کے شمالی امریکہ کنزیومر یونٹ کے چیئرمین کیتھلین وڈمر نے کہا یے کہ جے اینڈ جے آنے والے مہینوں میں ان مارکیٹوں میں فروخت کو ختم کردے گی۔

کمپنی کے ایک بلاگ کے مطابق ، جے اینڈ جے نے سب سے پہلے 1890 میں بیبی پاؤڈر مصنوعات کی فروخت شروع کی تھی۔

اس وقت جے اینڈ جے کو قانونی چارہ جوئی کا سامنا  ہے، اس پر الزام ہے اس نے اپنی مصنوعات سے کینسر پھیلنے کے خطرات کو چھپایا ہے. 

کینسر کی وجہ بننے کے خدشات کے بعد امریکہ میں  2017  سے جانسن اینڈ جانسن کے بیبی پاؤڈر  کی فروخت میں 60 فیصد کمی دیکھنے میں آئی ہے ۔ پچھلے مہینے ایسی قانونی درخواستوں کی تعداد میں 15 فیصد اضافہ ہوا ہے جن میں الزام لگایا گیا ہے کہ یہ بیبی پاؤڈر مختلف قسم کے کینسر کا سبب بنتا ہے۔

وڈمر نے کہا یے کہ جے اینڈ جے  اب  امریکہ اور کینیڈا میں صرف کارن-اسٹارچ پر مبنی بیبی پاؤڈر فروخت کرے گا، جب کہ  امریکہ کے علاوہ دیگر ممالک میں ٹالک پر مبنی پراڈکٹ  کی فروخت اب بھی جاری رہے گی.

تبصرے

اس بلاگ سے مقبول پوسٹس

"کرانچی ہمارا" اور "مرسوں مرسوں" کے شور میں دبی یہ آواز.... ذرا سی توجہ چاہتی ہے.

Gates Foundation, Wuhan Lab and WHO hacked. کروناوائرس: اصل حقیقت آخر ہے کیا

بجٹ اور ﺳﺮﮐﺎﺭﯼ ﻣﻼﺯﻣﯿﻦ  کی ﺗﻨﺨﻮﺍﮦ ﻣﯿﮟ ﺍﺿﺎﻓﮧ